اسٹیبلشمنٹ نے ماموں بنا دیا ؟ شرمین بخاری

اسٹبلشمنٹ نے سب کو ماموں بنا دیا ہے۔ آپ دیکھیں نواز شریف عمرانی حکومت سے پہلے جیل میں تھے پھر بھی ڈیڑھ سال سے عمران خان این آر او نہ دینے کی رٹ لگائے بیٹھے تھے اور تو اور ای سی اور ٹی وی نکالنے کے دعوے کرتے رہے۔ اب جب اسٹبلشمنٹ کو جیل میں مرتا نواز شریف زندہ نواز شریف سے زیادہ خطرناک لگا ہے تو انہوں نے فوراً اسے راتوں رات جیل سے نکالا اور دو ہفتوں کے اندر اسے ملک سے بھی باہر بھیج رہے ہیں اور ادھر خان صاحب اور پی ٹی آئی جو این آر او نہ کوئی ڈیل دینے والی بک بک کرتے تھے آج وہی حکومتی وزرا شرمندگی سے دیکھ رہے ہیں کہ نواز شریف باہر جارہے ہیں اور اس بات کو بھی دیکھ رہے کہ اسے باہر جانے پر کون مجبور کررہا۔ اسٹبلشمنٹ والوں نے ایسا پتا کھیلا کہ ملک میں جو نوجوان سویلین سپریمسی کی بات سمجھ رہے تھے وہ اب مایوس ہوجائیں گے خاص کر وہ جو اب تک اندھی تقلید کے پجاری نہیں تھے , اسٹبلشمنٹ مخالف سوچ کے علم بردار بننے کے خواہاں تھے انہیں بھی شدید طریقے سے متاثر کیا جا سکے گا۔ آپ دیکھیں اس سارے کھیل میں عوام سویلین لوگ سب ماموں بن گئے کچھ استعمال ہوگئے تو زیادہ تر بک گئے, ڈر گئے, ڈرائے گئے۔ وزیراعظم کی حیثیت سے عمران کو ذلیل بھی کیا اور عوام میں سیاستدانوں کے لئے وہی روایتی رجحان کو مضبوط کیا کہ یہ لوگ قابل اعتبار نہیں ہیں۔۔ اس وقت جنرل مزے سے سکون سے چھوٹے گلاسوں میں چسکیاں لے رہے ہونگے ۔ سارے ملک میں تذبذب پھیلا ہوا ہے کہ کس نے ڈیل کی, کس نے این آر او دیا, کون ملک چھوڑ کر بھاگ رہا. یہ چور ہے یہ نااہل ہے یہ سیلکٹیڈ ہے یہ الیکٹڈ ہے…… اک بات آخری یہ جو عوام میں تذبذب ہے نہ یہ ہمارے سیاستدانوں کی نااہلی کی وجہ سے ہے کہ کم سے کم ملک میں اندھی تقلید کے بجاء نظریاتی کارکن پیدا نہیں کیئے ہیں آپ کہیں گے کہ 70 سالہ تاریخ میں تمام سیاسی ہیروز جی ایچ کیو کی گیٹ نمبر چار سے گذر کر آئے ہیں جی بلکل لیکن یہی لوگ پھانسیاں بھی چڑھ گئے ہیں جیل بھی بھگت رہے ہیں بتائیں ان لوگوں نے اپنے اوپر سیاہ ادوار میں کونسے نظریاتی تنظیمی کام کیئے ہیں…. اب بھی وقت گیا نہیں عوام کو آگہی دیں اتنی آگہی دیں کہ وہ اپنے چالاک دشمن کی چالاکیوں کو پہچان سکیں

Facebook Comments