اظہر علی اور بابر اعظم کپتان مقرر۔ شہزاد فاروق

پاکستان کرکٹ بورڈ نے سرفراز احمد کو تینوں فارمیٹ میں کپتانی سے ہٹا دیا ہے- اظہر علی ٹیسٹ اور بابر اعظم ٹی ٹونٹی ٹیم کے کپتان ہوں گے- پاکستان کو اگلے نو دس ماہ چونکہ کوئی ون ڈے میچ نہیں کھیلنا, اس لئے ون ڈے کپتان کا اعلان نہیں کیا گیا ہے- ٹیسٹ میچز میں سرفراز احمد کی قیادت میں پاکستان نے ایک برا وقت دیکھا جب ہوم سیریز میں پاکستان کو سری لنکا اور نیوزی لینڈ نے سیریز میں شکست دے دی- سرفراز احمد کی اوسط جو کپتان بننے سے پہلے 40 سے زائد تھی, کپتانی کے دوران 25 رہی اور سرفراز اس دوران ایک بھی سنچری بنانے میں کامیاب نہ ہو سکے-

ٹی ٹونٹی میں سرفراز احمد کی کپتانی میں کچھ خاص برائی نہیں تھی- سرفراز احمد مسلسل گیارہ سیریز جیتنے والے کپتان تھے لیکن سری لنکا کے ہاتھوں کلین سویپ شکست اور سرفراز احمد کی بیٹنگ کے علاوہ نیشنل ٹی ٹونٹی کپ میں ایک صحافی کی بدتمیزی کے بعد سرفراز کی اچانک سندھ کی کپتانی چھوڑ دینے نے سرفراز کو ہٹانے میں اہم کردار ادا کیا- سرفراز احمد پچھلے سال ڈیڑھ سے ٹی ٹونٹی اور ون ڈے میں بیٹنگ کے دوران ساتویں اور آٹھویں نمبر پر بیٹنگ کرتے رہے- جب بھی دباؤ کے تحت سرفراز نے اوپر آنے کا فیصلہ کیا سرفراز کو بیٹنگ میں ناکامی کا منہ دیکھنا پڑا- سرفراز احمد اور ٹیم کی ورلڈکپ میں اچھی کارکردگی اور کوئی اور متبادل نہ ہونے کے باعث پاکستان کرکٹ بورڈ نے سری لنکا سیریز کے لئے سرفراز کو کپتان برقرار رکھا تھا لیکن ٹیم کی مایوس کن کارکردگی اور سرفراز کی مسلسل ناکام بیٹنگ نے سرفراز کو کپتانی سے ہٹانے میں اہم کردار ادا کیا-

اظہر علی اور بابر اعظم اس وقت بہترین انتخاب کہے جا سکتے ہیں- ٹیسٹ میچز میں بھی بابر اعظم کو ہی اظہر علی کا نائب منتخب کرنا چاہیے تاکہ وہ مستقبل میں کپتانی کے لئے تیار ہو سکیں- پاکستان کرکٹ ٹیم کا آسٹریلیا ٹیسٹ میں کامیابی کا امکان نہ ہونے کے برابر ہے لیکن ایک اچھی ٹی ٹونٹی ٹیم آسٹریلیا کو ٹی ٹونٹی سیریز میں شکست دے سکتی ہے-

Facebook Comments