بھارتی آزاد کشمیر میں کسی ایڈونچر کے چکر میں ہیں ۔

بھارت کی شمالی کمانڈ کے سربراہ لیفٹینٹ جنرل رنبیر سمگھ نے الزام لگایا ہے کہ مقبوضہ وادی میں دو سو سے تین سو دہشت گرد سرگرم ہیں،جن میں پانچ سو سے زیادہ دہشت گردوں نے پاکستان میں دہشت گردی کی تربیت حاصل کی ہے ۔ جمعہ کے روز جب چینی صدر بھارت کے دو روزہ دورہ پر ہیں مقبوضہ وادی میں بھارت فوج کے کمانڈر کا پاکستان پر دہشت گرد بھیجنے کا الزام بہت تشویش ناک ہے ۔ بھارتی دہشت گردی کے کسی واقعہ کی آڑ میں خطہ کو آگ میں جھونک سکتے ہیں ۔ اس بات کے امکانات ظاہر کئے جا رہے ہیں کہ بھارتی آزاد کشمیر میں کوئی محدود اپریشن کر سکتے ہیں اور پاکستان کی کمزور معیشت اور ملک میں چینتخب کی مسلسل حمایت سے اسٹیبلشمنٹ کی متاثر ہونے والی ساکھ سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔

بھاری عزائم کا مقابلہ کرنے کیلئے قومی یکجہتی کی جتنی ضرورت اج ہے پہلے کبھی نہیں تھی ۔ جمعہ کے روز بھارت نے لائین اف کنٹرول پر تین مقامات پر شدید گولہ باری کی ۔ پاک فوج جس نے بھارتی عزائم کو ناکام بنانا ہے اس کی ساکھ متاثر ہو رہی ہے ۔ محب وطن حلقوں کو فوری طور پر قومی یکجہتی کیلئے تمام درکار اقدامات کرنا ہونگے ۔

بھارتی جنرل نے پاکستان کیلئے دھمکی آمیز لہجہ اختیار کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں سرگرم دہشت گردوں میں پانچ سو پاکستان کے تربیت یافتہ ہیں ۔ بھارتی جنرل نے کہا کہ بھارت عالمی سرحدوں اور لائین اف کنٹرول پر دباو برقرار رکھے گا تاکہ در اندازی کو روکا جا سکے۔

Facebook Comments