تاجروں نے ریڈ زون بلاک کر دیا ۔

تاجر تنظیموں نے بڑھتی ہوئی مہنگائی ،ٹیکسوں کے غیر منصفانہ نظام اور معاشی بحران پر بدھ کے روز وفاقی دارالحکومت میں شدید احتجاج کیا ۔ مضطرب تاجر آبپارہ سے مارچ کرتے ہوئے ریڈ زون میں پہنچ گئے اور سرینا ہوٹل کے سامنے پولیس کی بھاری نفری نے تاجروں کو مزید آگے بڑھنے سے روک دیا ۔ اس موقع پر پولیس نے تاجروں پر شدید لاٹھی چارج بھی کیا جس سے متعدد تاجر زخمی ہو گئے ۔

دریں اثنا پاکستان پیپلز پارٹی نے تاجروں پر تشدد کی شدید مذمت کی ہے ۔ترجمان بلاول بھٹو زرداری مصطفی نواز کھوکھر نے کہا ہے

خان صاحب وعدے یاد کروانے والوں کو پولیس کا ڈنڈا دکھا دیتے ہیں۔

لاٹھی گولی کی سرکار نہ پہلے چل سکی نہ اب چلے گی۔

خان صاحب نے لوگوں سے روزگار،تاجروں سے کاروبار اور مریضوں سے علاج چھین لیا ہے۔

ڈاکٹر ہوں کہ تاجر جو بھی پرامن احتجاج کرتا ہے خون میں نہلا دیا جاتا ہے ۔

ابھی پشاور کے ڈاکٹروں کے زخم نہیں بھرے کہ اسلام آباد میں تاجروں پر فسطائیت برپا کر دی گئی ہے ۔

پیچھے بھوک ہے ، سامنے پولیس کا ڈنڈہ ہے، بے بس لوگ جائیں تو جائیں کہاں، ترجمان بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ

معاشی حالات، بھوک اور افلاس سے تنگ لوگ احتجاج نہ کریں تو کدھر جائیں۔

ریاست مدینہ کا خواب دکھانے والوں نے قوم پر بدترین آمریت نافذ کر دی ہے۔

Facebook Comments