زمین میں دفن بچی زندہ مل گئی ۔

بھارتی ریاست اتر پر دیش میں ایک ہندو جوڑا اپنی نوزئیدہ مردہ پیدا ہونے والی بیٹی کو دفن کرنے دیگر عزیزوں کے ہمراہ قبرستان پہنچا ۔بچی کیلئے قبر کھودی گئی تو اچانک کسی بچی کے رونے کی آواز آنے لگی ۔ والدین سمجھے کہ انکی بیٹی زندہ ہے ۔ لوگوں نے غور کیا تو آواز کھودی گئی قبر میں سے آ رہی تھی ۔قبر کو مزید کھودا گیا تو مٹی کے برتن میں دو تین روز قبل زندہ دفن کی گئی بچی موجود تھی ۔ اس بچی کو پیدا ہونے کے فوری بعد زندہ دفن کر دیا گیا تھا لیکن خدا کی قدرت نے اس بچی کو زندہ رکھا تھا ۔

نچی کو فوری طور پر ہسپتال پہنچایا گیا تو داکٹروں نے انکشاف کیا کہ بچی قبل از وقت پیدا ہوئی ہے اور اس کے پھپھروں میں انفکیشن بھی ہے جسکی وجہ سے بچی کو زیادہ اکسیجن کی ضرورت نہیں تھا اور وہ بہتر گھنٹہ سے زمین کے نیچے دفن برتن میں زندہ تھی ۔

مردہ پیدا ہونے والی بچی کے والدین نے اپنی بچی اسی قبر میں دفنا دی اور اس بچی کو بھگوان کا تحفہ سمجھ کر اپنانے کی خواہش کی ہے ۔ ایک مقامی سیاستدان نے قبر سے زندہ ملنے والی بچی کو اپنا لیا ہے ۔ قبر سے زندہ ملنے والی بچی کی حالت اب بہتر ہے اور بھارت کے قدامت پسند معاشرہ میں بڑی تعداد میں لوگ اسی بچی کو دیکھنے ا رہے ہیں ۔

ڈاکٹروں کا خیال ہے کسی خاندان نے جنس معلوم ہونے پر قبل از وقت پیدا ہونے والی بچی کو زندہ دفن کر دیا ۔ بھارت میں عما طور پر لرکیوں کو نحوست سمجھا جاتا ہے اور پیدا ہوتے ہی مار دیا جاتا ہے جسکی وجہ سے بھارت صنفی اعتبار سے عدم توازن کا شکار ہو چکا ہے جہاں سو لرکوں کے لئے محض 85 لرکیاں موجود ہیں ۔

Facebook Comments