یہ دھوکہ دینے سے باز نہیں آئیں گے ۔

( موجودہ سال کی پہلی سہہ ماہی کی رپورٹ میں حکومت ادائیگیوں کے توازن میں 35 فیصد کمی کا جو ڈھنڈوڑہ آج سے پیٹنا شروع کرے گی اس کو سمجھنے کی ضرورت ہے۔ رپورٹ کے مطابق برآمدات میں کوئی اضافہ نہیں ہوا بلکہ درآمدات میں کمی ہوئی ہے۔ درآمدات میں یہ تمام تر کمی جن چیزوں میں ہوئی ہے اسکا تمام تر سہرا حکومت کے سر ہے اور وہ داد و تحسین کے مستحق ہیں۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ یہ تمام تر کمی صنعتی پیداوار کے خام مال کی درآمد میں ہوئی ہے یا مشینری کی درآمد میں ہوئی ہے جو بے روزگاری کی بنیاد بنی ہے۔ مثلا” تعمیراتی کام رک جانے سے سریا کی پیداوار کم۔ہوئی اور تیجتا” لوہے کی درآمد۔ آپ صرف اس چیز سے پیدا ہونے والی بیروزگاری کا اندازہ کر لیں۔ گاڑیاں بنانے کے پلانٹ بند ہوئے تو ظاہر ہے درآمدات بند۔ پائپ فیکٹریاں بند ہوئیں تو خام مال کی درآمد بند۔ غرض ہر شعبے میں یہی حال ہے۔ ادائیگیوں کے توازن میں بہتری تب مفید ہوتی ہے جب وہ برآمدات ( exports )میں اضافے کی بنا پر ہو۔ ملک میں بھوک اور بیروزگاری رقص کر رہی ہے اور نالائق وزیر خزانہ ڈھول بجا رہا ہے۔ انجینئیر قمرالاسلام

Facebook Comments