نام بڑے درشن چھوٹے ۔ محمد جاوید مرزا

17 روپے کلو والے ٹماٹر منگوانے کے لیے الہ دین ثانی حفیظ شیخ صاحب کے پرانے چراغ کو بار بار رگڑنے اور زمین پر پٹختے پر آخر کار ڈبو ایک موٹا سا پاکستانی جن نمودار ہوا ۔ انتہائئ نقاہت بھرے غصیلے لہجے میں بولا ، کیا مصیبت ھے ۔ مجھے کیوں بلایا ہے، پھر کچھ دیر توقف کے بعد خود کلامی کرتے ہوے کہنے لگا کہ ستر سال بیکار بیٹھے رہنے سے میرا وزن بڑھ گیا ھے اور مجھے شوگر بھی ہوگئی ھے براے مہربانی اب مجھے کوئی کام مت…

سب راز ہوئے فاش ۔ نذیر ڈھوکی

چیٸر مین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے ایک بار پھر سلیکٹڈ سے سوال کیا ہے کہ آپ کو امپاٸر کی انگلی پسند آٸی ، ساتھ سلیکٹرز سے بھی پوچھا ہے کہ آپ کو تبدیلی پسند آٸی ؟ ٹویٹر پیغام میں چیٸرمین پیپلز پارٹی نے کہا ہے کہ سلیکٹڈ تمہارا کھیل ختم ، نہ امپاٸر کی انگلی ، نہ جعلی تبدیلی، صرف عوام کی مرضی چلے گی . لیجٸے جناب اب تو پی ٹی آٸی کے اتحادی پرویز الہی نے بھی مان لیا ہے کہ ان کی پارٹی کو جنرل…

بند دروازے بھی کھل جاتے ہیں ۔ عبدالستار چوہدری

تبدیلی سرکار کے ساتھ حریم شاہ اور اسکی دوست کا کیا رشتہ ہے یہ تو معلوم نہیں لیکن حال ہی اہم سرکاری عمارتوں میں ویڈیوز سے شہرت پانے والی ٹک ٹاک کوئین حریم شاہ نے ایک صحافی کو انٹرویو دیتے ہوئے وہ سچ بول دیا ہے جو تحریک انصاف حکومت کی مکمل “کیمسٹری” بیان کر گیا ہے.. حریم شاہ نے سعادت حسن منٹو کے افسانوں والا کڑوا سچ ہی بولا ہے لیکن ہم بطور قوم اس کڑوے سچ کا سامنا کرنے کے لئے آج ستر سال بعد بھی تیار نہیں..…

سول ملٹری ڈیموکریسی کے نئے تجربات۔ اطہر مسعود وانی

پس پردہ رہتے ہوئے اپنے احکامات اپنی ہدایات پر حکومت کو ایک ڈاکخانے کے طور پر استعمال کرتے ہوئے ملک کو چلانے کے طریقہ کار کو بحال رکھنے کے لئے جنرل ایوب سے لیکر آج تک بہت سے تجربے کئے ہیں لیکن ملک کی بہتری کے لئے قرار دیئے گئے ان تمام تجربات کا ملک و عوام کے لئے تباہ کن ہونا ثابت شدہ امر ہے۔ ایک بار پھر صدارتی نظام،ٹیکنوکریٹ حکومت کی طرح کے مختلف آپشن یا ان کے مغلوبے کی باتیں کی جار ہی ہیں۔ پاکستان میں الیکشن…

کالی دال ۔ عمران زاہد

:ریحام خان نے اپنی کتاب میں تذکرہ کیا ہے کہ:“نومبر کے مہینے میں ایک روز میں بیڈ روم میں داخل ہوئی تو میں نے دیکھا عمران خان ایک سفید چادر پر ننگا لیٹا اپنے سارے جسم پر کالی دال مل رہا تھا یہاں تک کہ اس نے اپنی شرمگاہ پر بھی کالی دال مل لی۔ مجھے دیکھ کر کہنے لگا کہ اس کا بہنوئی احد کسی عامل کو لے کر آیا تھا جس نے بتایا ہے کہ مجھ پر کسی نے جادو کر رکھا ہے جس سے نجات پانے کے…

زندہ ہے نواز شریف زندہ ہے ۔ مطیع اللہ جان

اندھے عوام عقل کے اندھے حکمرانوں کو چھو کر جاننا چاہتے ہیں کہ ان کو سنائی دینے والے فیصلے کون کر رہا ہے۔ مگر شاید عقل کے اندھے حکمران اندھے عوام کے چھو کر جاننے اور پہچاننے کی حس سے بھی خوفزدہ ہیں۔ میڈیا پر پابندیاں اسی خوف کی علامت ہیں۔ عقل کے اندھے حکمرانوں نے تہتر سال میں ملک توڑ دیا مگر مگر عوام یا اس کے نمائندے انہیں چھو بھی نہ سکے۔ عوام اور ان کے سیاسی نمائندوں کے ساتھ کوکلا چھپاتی کھیلتی خفیہ قووتوں کو اسٹیبلشمنٹ کے…

فارن فنڈنگ کیس میں را کے سی پیک مخالف فنڈز بھی شامل ہیں ؟ احتشام الحق شامی

سب کے علم میں ہے کہ دو ہزار چودہ کے اسپانسرڈ دھرنے میں خان صاحب کے کنٹینر سے الفاظ اور الزامات کے گولا باری ہوتی تھی تو سی پیک منصوبہ بھی اس گولا باری کی زد میں آتا تھا، کبھی کہا جاتا تھا قومیں سڑکوں کی تعمیر سے نہیں بنتی اور کبھی انکشاف ہوتا کہ چین مہنگے قرضے دے رہا ہے ۔ بعد ازاں آہستہ آہستہ غیر محسوسانہ انداز میں سی پیک یعنی چائینہ پاکستان اکنامک کاریڈور منصوبے کے خلاف منظم انداز میں الیکٹرانک اور سوشل میڈیا مہم چلائی گئی،…

انسپکٹر جمشید کے لازوال کردار سے پاکستانی بچے واقف ہیں ۔فاروق احمد

آج اشتیاق احمد کی برسی ہے ۔ انسپکٹر جمشید سیریز کے تخلیق کار، سوا آٹھ سو جاسوسی ناولوں کے مصنف اشتیاق احمد کے انتقال کو آج چار برس پورے ہوئے ۔ اشتیاق احمد پانی پت کے محلہ لاڈلا کنواں میں 5 جون 1944کو پیدا ہوئے۔ والد کا نام مشتاق احمد تھا اور دادا کا گل محمد۔ والد صاحب پرچون کے کاروبار سے منسلک تھے۔ لاڈلا کنواں میں اشتیاق احمد کے نانا کا گھر بھی تھا۔ ۔ اشتیاق احمد تعلیمی میدان میں آگے تھے۔ اسلامیہ ہائی اسکول جھنگ میں ان کا…

لیفٹ کے دوستوں سے ایک گزارش ۔ انعام رانا

پاکستانی میں طبقاتی تفریق اور کشمکش اپنے عروج پہ ہے۔ سرمایہ دارانہ عفریت منہ کھولے انکو بھی نگلنے پہ ہے جو کبھی خود اسکے ساتھی یا سمپتھائزر تھے۔ سیاسی طور پہ ایک بڑا ویکیوم ہے اور لیفٹ سیاست اور جدوجہد کیلئیے زریں موقع ہے کہ وہ لوگوں تک اپنی بات کو لیجائے۔ جن بھی وجوہات کی بنا پر، نئی نسل کو شاید ایک بہت اچھی بزرگ سرپرستی میسر نہیں آئی جو انکی تربیت کرتی، سٹڈی سرکلز کراتی اور گراس روٹ پہ جدوجہد سے منسلک کرتی۔ ہمارے بڑے بھی آپسی سر…

پرویز الہی دلیر نہیں ہوئے اسٹیبلشمنٹ کمزور ہو گئی ہے ۔

فوج کی سیاست میں مداخلت ایک ایسا روشن سچ ہے جس کی ہر سیاسی حکومت میں فوج کا ہر ترجمان ہمیشہ دھڑلے سے تردید کرتا ہے ۔فوج کے ہاتھوں میں موجود بندوق کی وجہ سے پاکستانیوں کو اس پر ایمان بھی لانا ہوتا ہے ۔کوئی گستاخ اگر “بادشاہ ننگا ہے “ کا نعرہ مستانہ بلند کر دے تو اسے ننگا کر کے لوہے کی سلاخوں سے بتایا جاتا ہے کہ بادشاہ نے کپڑے پہنے ہوئے ہیں ۔چوہدری پرویز الہی نے جو نعرہ مستانہ بلند کیا ہے اس کا مطلب یہ…